میری شاعری

آپ کی شائع شدہ شاعری

اس سیکشن میں اپنی شاعری کیسے شائع کریں؟

#موزوں بزم مولائے کائنات کے۹۶ ویں آن لائن مشاعرے میں کہا گیا کلام

21 فروری 2017


گئی عرشِ معلیٰٰ جب شہِ دیں کی سواری ہے
ملک خوشیاں منائیں آمدِ محبوبِِ باری ہے
کہا رخسار کو وَالشمس اور والیل گیسو کو
خدا نے اس طرح محبوب کی صورت سنواری ہے
مزید دکھائیں
#موزوں غزل

20 فروری 2017


یہ موسم ہے یا تو ہے بدلا
اندھیرا ہے کیسایہ پھیلا
جہاں ہاتھ تھاما تھا تم نے
وہیں میں کھڑا ہوں اکیلا
مزید دکھائیں
#موزوں مسجودِ ملائک

20 فروری 2017


بھٹکتا در بدر کیوں علم میرا ہے
جنوںُ دیوانگی ہی جرم میرا ہے
غلط کل تو نہیں ہوں اِس زمانے میں
ہوں مسجودِ ملائک کرم تیرا ہے
#موزوں مسجودِ ملائک

20 فروری 2017


مفاعیلن مفاعیلن مفاعیلن
بھٹکتا در بدر کیوں علم میرا ہے
جنوںُ دیوانگی ہی جرم میرا ہے
غلط کل تو نہیں ہوں اِس زمانے میں
مزید دکھائیں
#موزوں بندشیں۔۔۔

20 فروری 2017


بندشیں ہیں یہ تو زمانے کی
لوگ ورنہ چلیں گے کپڑے اتار
وعظ سے دوسروں کے، ہے بہتر
اپنی کمزوریاں تو کرلے سدھار
#موزوں غزل

20 فروری 2017


کیوں اس نگا ہِ ناز کی چاہت ہوئی ؟
سردھن رہا ہوں میں صبا آفت ہوئی
تھی وہ حسیں ایسی ، چلی دل پر چھڑی
دن رات رونے کی مجھےدولت ہوئی
مزید دکھائیں
#موزوں غزل

20 فروری 2017


نئی ہے یا پرانی ہے
کہانی تو کہانی ہے
خوشی میں ٹپکے یا غم میں
یہ آنسو گرم پانی ہے
مزید دکھائیں
#موزوں رباعی

20 فروری 2017


خوں ہوں جو قطعات رباعی نکلےْ
پر نا ہی بر افق صباحی نکلے
گو ماتم قطعات رہے کرتے سدا
پھر بھی نا معقول مساعی نکلے
#موزوں رباعی

20 فروری 2017


ہم جو ہیں یاں دایم ہی نیم چڑھے
مجھ جیسا کوئی بھی نا جھوٹ گڑھے
شیطاں جو میرا بد باطن دیکھے
پھر بر عکسِ فطرت لاحول پڑھے
#موزوں رباعی

20 فروری 2017


اک گر ہوتے ہیں جو در نطق کہیں
ہوتے اک لیکن در کردار نہیں
کہنے کو اک اب کی اولاد سبھی
لیکن یکساں سب کی رفتار نہیں
#موزوں رباعی

20 فروری 2017


شیطاں ہو یا نفس کرے نقصاں ہی
کوشش دونوں کرے رہے حرماں ہی
بس ڈالو دونوں پہ ہی سخت نظر
بس تاکہ ہو نہیں کبھی نقصاں بھی
#موزوں رباعی

20 فروری 2017


از وعدہ ہرچند مکر جاتا ہے
گر گٹ جیسا رنگ بدل جاتا ہے
شیطاں کے شاگردوں کا حال یہی
یوں جو گرتا نہیں سنبھل پاتا ہے
#موزوں رباعی

20 فروری 2017


بس مانا کچھ رکھتا ہے لوچ کماں
کرتا ہے یہ لوچ ہدف قید عیاں
پر بت میں جو لوچ لچک ہے سالک
دے پائے گاہے یہ تمثیل کہاں
#موزوں رباعی

20 فروری 2017


لے قابو گرداب پہ ہر عزم جواں
لے ڈوبے کشتی ہی ہے تاب کہاں
گاہے جو کشتی ہو غرقاب کہیں
تو ہے یہ نادر کلمعدوم یہاں
#موزوں رباعی

20 فروری 2017


دعوی ہے تو پیش کریں اس کی دلیل
سالک کو کیا غرض رہیں سب کے وکیل
ہم نا حامی ہیں نا منکر ان کے
سر پر جن کے پڑی وہی ڈالیں نکیل
#موزوں سل دیا ۔۔۔

20 فروری 2017


سل دیا منہ زمانے نے میرا
اب مرے ہاتھ بات کرتے ہیں
یوں ہی شہرت نہیں ملی ہم کو
محنتیں پوری رات کرتے ہیں
#موزوں بزم مولائے کائنات کے ۹۵ ویں آن لائن مشاعرے میں کہا گیا کلام

20 فروری 2017


نہیں عجب جو یہ انکا غلام کرتا ہے
نبی کا ذکر تو رب کا کلام کرتا ہت
فرشتے اس کے لبوں کو ادب سے دیں بوسہ
جو مدحتِِ شہِ خیر الانام کرتا ہے
مزید دکھائیں
#موزوں خود شناسی

19 فروری 2017


مرے مولا مجھے حاصل ہوجائے وہ شناسائی
میں خود کو چھین لوں خود سے مری ایسی ہو آگاہی
ملالِ زیست کب ہیں تلخیاں راہِ صداقت کیں
الم یہ کے یہاں ملتی نہیں حق کو پذیرائی
مزید دکھائیں