میری شاعری

آپ کی شائع شدہ شاعری

اس سیکشن میں اپنی شاعری کیسے شائع کریں؟

#موزوں قطعہ - میں زندہ ہوں اب تلک

22 اگست 2017


جانے وہ کیا طلب ہے جو دل میں ہے جا گزیں
منزل کے سامنے بھی میں تشنہ ہوں اب تلک
تو زندگی ہے اور ہے شاید یہی وجہ
ہنستا ہوں بولتا ہوں میں زندہ ہوں اب تلک
#موزوں غزل

21 اگست 2017


دکھوں کو دل کے پردے میں چھپا کر
مجھے جینا ہے یوہی مسکرا کر
شکستہ دل کیا حرص و ہوس نے
مجھے رکھنا تھا یہ شیشہ بچا کر
مزید دکھائیں
#موزوں وفا میں استقامت کس لئے ہے؟

21 اگست 2017


وفا میں استقامت کس لئے ہے؟
یہ دل اب تک سلامت کس لئے ہے؟
تمھارا جرم گر کچھ بھی نہیں ہے
تو آنکھوں میں ندامت کس لئے ہے؟
مزید دکھائیں
#موزوں اللہ سے

21 اگست 2017


میں بھٹک جاؤں نہ سیدھی راہ سے
رابطہ رکھتا ہوں میں اللہ سے
میں خدا سے ڈرتا ہوں کچھ اسلیئے
ڈرتا ہوں مظلوم کی اک آہ سے
مزید دکھائیں
#موزوں احمد آشنا شاعری

20 اگست 2017


ایسی قدموں کو گزرگاہ کا عادی نہ بنا
وہ محبت میں اگر آپ کو کافر کر دے
بس دسمبر ہی میں شاعر کا جنوں جاگتا ہے
اپنے احساس کو اس ماہ کا عادی نہ بنا
#موزوں تازہ غزل

20 اگست 2017


جو کہے ہر بات پر، سمجھا کریں
اب بتا، اس آدمی کا کیا کریں
آ رہے گا اس زمیں پر آسماں
ہم اگر یہ ہاتھ, یوں الٹا کریں
مزید دکھائیں
#موزوں اک بے وفا کے واسطے مضطر بنا رہا

20 اگست 2017


اک بے وفا کے واسطے مضطر بنا رہا
جانے میں کس خمار میں خود سر بنا رہا
اک پل میں ہی نکل گیا اس کے گمان سے
برسوں میں جس کی سوچ کا محور بنا رہا
مزید دکھائیں
#موزوں اشعارInder saraazi

20 اگست 2017


رات تو سو گئی تھی چاند کے ساتھ
اور میں انتظار کرتا رہا
پھر وہی تو ہوا کہ میں خود کو
تیری چاہت پہ وار کرتا رہا
#موزوں رباعی

20 اگست 2017


خواہش تھی زندگی میں کوئی رازداں ملے
ہر گام پر ملے تو مجھے مہرباں ملے
دل میں سمائے ایسے کہ ہر جا وہی دِکھے
جس سمت کی نظر وہ وہیں ضوفشاں ملے
#موزوں عالم محشر کی جھلکیاں

19 اگست 2017


فانی بدن سے جاں کو نکلنا ہے ایک دن
ڈھانچے کو سڑ کے قبر میں گلنا ہے ایک دن
بھوکی زمیں ہے، تجھ کو نگلنا ہے ایک دن
مدت کے بعد سارا اگلنا ہے ایک دن
مزید دکھائیں
#موزوں اک راز بتاؤں گی، مگر جانے دو

19 اگست 2017


اک راز بتاؤں گی ، مگر جانے دو
اک بار ہمیں بھی تو مُکر جانے دو
پروانے کو ہر حد سے گزر جانے دو
اور شمع کی آغوش میں مر جانے دو
مزید دکھائیں
#موزوں چھوٹی بحر میں بڑی بات

19 اگست 2017


نہ میں ضرورت ہوں اب کسی کی
نہ مجھ سے ملنے کی ہے ضرورت
ذرا سا سچ میں کہوں ، کہیں سب
یہ ہونٹ سلنے کی ہے ضرورت
#موزوں اشعار

19 اگست 2017


پھر وہی تو ہوا کہ میں خود کو
تیری چاہت پہ وار کرتا رہا
کچھ ہوا کا بھی ہاتھ تھا ورنہ
پردہ یوں ہی ہلا نہیں ہوتا
#موزوں بدنامِ زمانہ ملاقات

19 اگست 2017


اس کے بھائی نے جو لیا ہے فون
وہ مری جیب کا ہی خرچہ تھا
کب کسی کو پتہ چلا تھا ندیم
جس ملاقات کا یہ چرچا تھا
#موزوں کچا گھڑا

19 اگست 2017


تیرنا بھی نہیں تھا آتا مجھے
اور ابھی یہ گھڑا بھی کچا تھا
عشق اپنا بھی کچا پکا تھا
اورکچھ یار بھی تو بچہ تھا
#موزوں جب سے محفل تری میں آئے ہیں (غزل)

19 اگست 2017


جب سے محفل تری میں آئے ہیں
جستجو تیری ساتھ لائے ہیں.
ہم ابھی تو یہاں پہ آئے ہیں
جلد کیوں ہم یہاں پہ چھائے ہیں۔
مزید دکھائیں
#موزوں غزل

19 اگست 2017


نہ سمجھو اِنہیں بے کسانِ محبّت
یہ دلگیر ہیں شادمانِ محبّت
محبّت کے صدموں سے حظ لینے والے
نہ ہوں گے بجز محرمانِ محبّت
مزید دکھائیں
#موزوں غزل

18 اگست 2017


لمحہ لمحہ حساب دُنیا میں
ہم نے بُھگتا عذاب دُنیا میں
بھیک میں مانگتے ہوئے اُلفت
ہم نے دیکھے نواب دُنیا میں
مزید دکھائیں