زَردَار کا خَنّاس نہیں جاتا ہے (رباعی)
زَردَار کا خَنّاس نہیں جاتا ہے
ہر آن کا وَسواس نہیں جاتا ہے
ہوتا ہے جو شدّتِ ہَوَس پر مَبنی
تا مَرگ وہ افلاس نہیں جاتا ہے
اشعار کی تقطیع
تبصرے