مجھ کو دیارِ غیر میں مارا، وطن سے دور (غزل)
مجھ کو دیارِ غیر میں مارا، وطن سے دور
رکھ لی مرے خدا نے مری بےکسی کی شرم
وہ حلقہ ہائے زلف، کمیں میں ہیں اے خدا
رکھ لیجو میرے دعویِ وارستگی کی شرم
اشعار کی تقطیع
تبصرے