مت مردُمکِ دیدہ میں سمجھو یہ نگاہیں (غزل)
مت مردُمکِ دیدہ میں سمجھو یہ نگاہیں
ہیں جمع سویدائے دلِ چشم میں آہیں
اشعار کی تقطیع
تبصرے