ہو گئی ہے غیر کی شیریں بیانی کارگر (شعر)
ہو گئی ہے غیر کی شیریں بیانی کارگر
عشق کا اس کو گماں ہم بے زبانوں پر نہیں
اشعار کی تقطیع
تبصرے