ابر روتا ہے کہ بزمِ طرب آمادہ کرو (شعر)
ابر روتا ہے کہ بزمِ طرب آمادہ کرو
برق ہنستی ہے کہ فرصت کوئی دم دے ہم کو
اشعار کی تقطیع
تبصرے