حاصل سے ہاتھ دھو بیٹھ اے آرزو خرامی (قطعہ)
حاصل سے ہاتھ دھو بیٹھ اے آرزو خرامی
دل جوشِ گریہ میں ہے ڈوبی ہوئی اسامی
اس شمع کی طرح سے جس کو کوئی بجھائے
میں بھی جلے ہؤوں میں ہوں داغِ نا تمامی
اشعار کی تقطیع
تبصرے