تم اپنے شکوے کی باتیں نہ کھود کھود کے* پوچھو (قطعہ)
تم اپنے شکوے کی باتیں نہ کھود کھود کے* پوچھو
حذر کرو مرے دل سے کہ اس میں آگ دبی ہے
دلا یہ درد و الم بھی تو مغتنم ہے کہ آخر
نہ گریۂ سحری ہے نہ آہ نیم شبی ہے
اشعار کی تقطیع
تبصرے