سرمۂ مفتِ نظر ہوں مری قیمت یہ ہے (قطعہ)
سرمۂ مفتِ نظر ہوں مری قیمت یہ ہے
کہ رہے چشمِ خریدار پہ احساں میرا
رخصتِ نالہ مجھے دے کہ مبادا ظالم
تیرے چہرے سے ہو ظاہر غمِ پنہاں میرا
اشعار کی تقطیع
تبصرے