مند گئیں کھولتے ہی کھولتے آنکھیں غالبؔ (شعر)
مند گئیں کھولتے ہی کھولتے آنکھیں غالبؔ
یار لائے مری بالیں پہ اسے، پر کس وقت
اشعار کی تقطیع
تبصرے